New Latest Sad Love Poetry In Urdu 2 Lines (2022)

 New Latest Sad Love Poetry In Urdu 2 Lines (2022)

New Latest Sad Love Poetry In Urdu 2 Lines (2022)

اوپر سے غصہ دل سے پیار کرتے ہو نظرے چوراتے ہو دل بے قرار کرتے ہو

لاکھ چھیاو دنیا سے مجھے خبر ہے | تم مجھے خود سے بھی زیادہ پیار کرتے ہو


وہ جارہا تھا مگر میں کہہ نہیں پایا  

کہ یار ایسے نہ جا خود میں مبتلا کرکے


Wo ja raha tha magr main keh nahin paya

Ke yar aise na ja khud mein mubtala kar ke


تری طلب بھی نہ آئی ہمارے حصے میں 

کسی کے بخت میں لکھا گیا مکمل تُو 


Teri Talab bhi na ayi humare hissay me

Kisi ke bakhat mein likha gya mukamal tu


بعد اُس کے غمِ ہجر میں, شریکِ غم کوئی نا تھا

سو اُس کا نام لے کر ہم,خدا کے سامنے بہت روئے


Bad uske gham e hijr me, shareek e gham koi na tha

So us ka naam lay kar hum khuda ke samny bhot roye


میں ان دنوں عجب درد کی لپیٹ میں ہوں

یقین کر مجھے تیری بہت ضرورت ہے


Main in dino ajab dard ki lipait mein hon

Yaqeen kar mujhe teri bhot zarort hai


میں چاہتا ہوں تیرے حصے میں اتنا بھی نہ آئے

تو میری قبر پہ آئے اور پھول بھی چڑھا نہ پائے


Main chata Hon tere hissay me itna bhi na aye

Tu meri qabat Pa aye aur tu phool bhi na chara paye


کبھی تو آنا میرے کمرہِ زیست کی تنہائیوں میں

تمہیں صرف آہوں کے سوا کچھ سنائی نہیں دے گا


Kabhi to ana mere kamray e zeest ki tanhaiyon me

Tumhen sirf Aahon ke siwa kuch sunayi nahi dy ga


جب تمہیں احساس ہو اپنی غلطی کا اورلوٹنا چاہو

میں تمہیں دشت کے ویراں صحرا میں کہیں ملوں گا


Jab tumhen ehsas ho apni ghalti ka aur lautna chao

Main tumhen dasht ke weeran sehra mein kahin milu ga


حسرتیں شب کو گریباں پکڑتی ہیں میرا

 اور میں سر جھکائے ہوئے رو پڑتا ہوں 


Hasraten shab ko gareban pakarti hain mera

Aur main sar jhukaye hoye ro parta hon


دکھ اس قدر ہیں خود میں لیکن۔۔

مر جانے کے مقام پر بھی جی رہے ہیں۔۔


Dukh is qadar hain khud mein lekin

Mar janay ke maqam apr bhi jee rahy hain


میں قصہ مختصر نہیں تھا

ورق کو جلدی پلٹ گۓ ہو تم۔


Main Qisa mukhtasar nahi tha

Warq jaldi palat gay ho tum 


ہنسی ہنسی میں اُڑائی ہیں تلخیاں کتنی

اِنہیں شمار جو کرتے تو، مر گئے ہوتے۔۔


Hansi hansi mein urayi hain talkhiyan kitni

Inhen shumat jo karty to mar gay hoty.. 


بدن کے قید خانے میں عجب تھی روح کی حالت‌ 

اسیری بھی مقدم تھی رہائی بھی ضروری تھی


Badan ki qaid me ajab thi rooh ki halat

Aseeri bhi mukadam thi rihayi bhi zarori thi


خشک  لکڑی کی طرح دشت میں  رکھے رکھے

کھا گیا ہجر تیرا _____ جسم برادا کر کے 


Khushk lakri ki tarha dasht e rakhy rakhy

Kha gya hijr tera_______jism barada kar ke


انا کا معاملہ درپیش ہے ، ورنہ حقیقت میں

اسے میری، مجھے اسکی کمی محسوس ہوتی ہے


Ana ka mamla darpaish hai warna haqeeqat me

Usy meri aur mujhe us ki kami mehsoos hoti hai


ہم نشین ایک تیرے نہ ہونے سے

بڑی مشکل سے دن گزارے ہیں


Humnasheen ik tere na hony se

Bari mushkil se din guzary hain


ابھی تو چند لفظوں میـــں سمیٹا ہے تجھے میــــں نــے

 ابھی تو میـــری کتابوں میـــں تیــــری تفسیر باقی ہــے


Abhi to chand lafzon me sameta hai tujhe maine

Abhi to mwri kitabon me teri tafseer baki hai


یہ میرے واسطے لازم ہے کہ تو بات کرے

       تیرا  چپ  رہنا  میری  عمر  گھٹا جاتا ہے


Ye mere wasty lazim hai ke tu baat kary

Tera chup rehna meri umar ghata jata hai


وہ سمجھتا تھا بچھڑ جانا ہے آسان بہت

اسکو لگتا تھا فقط ہاتھ چھڑانا ہے 


Wo smjhta tha bichar jana hai asan bhot

Usy lagta tha faqt hath churana ho ga 


وہ تخیل میں بھی گر مجھ سے جدا ہوتا ہے

روح کانپ اٹھتی ہے اور حشر بپا ہوتا ہے


Wo takhiyal me bhi gr mujhse juda hota hai

Rooh kaano uthti hai aur hashar bapa hota hai


میں اپنی قبر پہ تختی بھی نہیں لگاؤں گا

اور تو مجھے خاک میں ڈھونڈتی رہے گی


Main apni qabar Pa takhti bhi nahi lagau ga

Aur tu mujhe khaak me dhondti rahy gi ..


اسے تو صرف بچھڑنے کا دکھ ہے اور مجھے

یہ بھی غم ہے وہ مجھے یاد کر کے روئے گا ۔


Usy to sirf bicharny ka dukh hai aur mujhe 

Ye bhi gham hai wo mujhe yad kar ke roye ga


ہم کو نیچے اُتار لیں گے لوگ

عشق لٹکا رہے گا پنکھے سے


Humko neeche utar layen gy log

Ishq latka rahy ga punkhy se 


آنکھوں سے آنسووں کے چشمے نکل پڑے

جب جب بھی میں نے اس شخص کو یاد کیا


Aankhon se ansuon ke chasmy nikal paray

Jab jab bhi Maine us shakhs ko yad kiya.. 


دراصل میں نے مشقت نہیں محبت کی ہے

ہتھیلیوں پہ نہیں میرے دل پہ چھالے ہیں


Darasal Maine mushaqat nahi mohabbat ki

Hatheliyon Pa nahi mere dil Pa chalay hain 


کبھی جو پڑھتے تھے ، اداس کہانیاں 

آج اپنی ہی زندگی کا عنوان لگتی ہیں


Kabhi jo parhty thy udas kahaniyan

Aaj apni hi zindagi ka unwan lagti hain


کسی روز صاحب میری لاش ملے گی سڑک کنارے

کسی روز اپنوں کے سارے بھرم ٹوٹ جائیں گیں


Kisi roz sahib meri lash mily gi sarak kinary

Kisi roz apnon ke sarat bharam toot jayen gay


مرشد ہمارے ورثے میں کچھ بھی نہیں

بےموسمی وفات کا دکھ چھوڑ جائیں گے


Murshad humary wirsy me kuch bhi nahi

Bey mausmi wafat ka dukh chor jayen gay


تمہیں یہ بھی کبھی خیال نہ آیا ؟؟؟

ساری زندگی تیری راہ __دیکھتے رہے ہم


Tumhen ye bhi kabhi khiyal na aya?? 

Sari zindagi teri raah dekhty rahy hum.. 


‏پتا کرو کہ بقایا کدھر گیا ہوں میں

وہ کہہ رہا ہے مکمل نہیں ملا اس کو


Pata karo baki kidhr gya Hon main

Wo keh raha hai mukamal nahi Mila usko


تو اگر مجھ سے گریزاں ہے تو چل

میں تجھے بھاڑ کی دہلیز پے چھوڑ آتا ہوں


Tu agr mujhse garezan hai to chal

Main tujhe bhar ki dehleez Pa chor ata hon


زندگی ہے کہ بن بیٹھی ہے غموں کا سمندر 

کہ جو بھی لہر اُٹھتی ہے اک نیا زخم دے جاتی ہے


Zindagi hai ke ban baithi hai ghamon ka samandar

Ke jo bhi lehr uthti hai ik naya zakham dy jati hai


مٹی کی محبت ہم آشفتہ سروں نے 

وہ قرض اُتارے ہیں کہ واجب ہی نہ تھے


Mati ki mohabbat hum ashafta saron ne

Wo karz utary hain ke wajib hi na thay 


میری تصویر کو دیکھا تو کہا لوگوں نے

اس کو زبر دستی ہنسایا گیا ہے 


Meri tasveer ko dekha to laha logo ne

Iss ko zabardasti hansaya gaya hai... 


ایک ایسا مسئلہ درپیش ہے  ہمیں  

کہ جسکا آخری حل خودکشی نکلتا ہے


Aik aisa masala darpesh hai humen

Ke jis ka akhri hal khudkhushi nikalta hai


نہیں ہـوگا کمـزور کبھـی تمہـارا کبـھی ہمـارا رشـتہ

یہ تـو وقت کی سـازش کبھی تـم مصـروف کبھی ہـم


Nahi hoga kamzoor kabhi tumhara humara rishta

Ye to waqr ki saazish hai kabhi tum masroof kabhi hum


تم    کو    جہان شوق و تمنا   میں   کیا   ملا​ 

ہم  بھی ملے  تو   درہم و برہم  ملے  تمہیں


Tum ko jahan shauq o tamana me kia Mila 

Hum bhi milay to darhum barhum mily tumhen


زخم جدائی کے دھیرے دھیرے بھر جاتے تو اچھا تھا

کاش بچھڑ جانے سے پہلے ہم مر جاتے تو اچھا تھا.۔۔


Zakham judai ke dheere dheere bhar jaty to acha tha

Kaash bicharny se pehle hum Mar jaty to acha tha 


میں وہ دھتکارا ہوا پھول ہوں جس کو

آخری وقت تلک آس میں رکھا گیا ہے


Me who dhutkara hoa phool Hon jis ko

Aakhri waqt talk aas me rakha gaya 


شکوے آنکھوں سے گر پڑے ورنہ

لفظ ہونٹوں سے کب کہے ہم نے


Sikway aankhon se gir paray warna

Lafz honton se kab kahay hum ne 


خواب بھی اک دن میرے مجھ سے چھین لئے گئے

نیند  تمہارے  بن  تو  بس  پھر   نیند   ہی   تھی


Khawab bhi ik din mere mujhse cheen liye gay

Neend tunhary bin to bas phr neend hi thi 


کبھی دیکھی ہے زندگی میں ایسی اذیت تم نے؟

کوئی آپ کہے، پھر تم کہے، پھر تم سے کہے، تم کون ہو؟


Kabhi dekhi hai zindagi me aisi aziyat tum ne? 

Koi aap kahy, phr tum kahy, phr tumse kahy tum kon? 


میری عمر کے ساتھ تیری جدائی کا غم بھی بڑھ رہا ہے

لوگ جھوٹے تھے، جو کہتے تھے، دو چار دن کی بات ہے


Meri umar ke sath teri judai ka gham bhi barh raha hai 

Log jhotay thy, jo kehty ghy do chaar din ki baat hai 


وہ شخص__ہر بات 

نصیبوں پہ ڈال کر مُکر گیا آخر


Wo shakhs____har baat

Naseebon Pa dal kar mukar gaya akhir


تم نے دیکھا ہے کبھی آنکھ میں بہتا ہوا خواب

تم نے سمجھے ہیں کبھی ہونٹ پہ سہمے ہوئے لفظ


Tumne dekha hai kabhi aankh me behta hoa khawab

Tumne samjhy hain kabhi hont Pa sehmy hoye lafz 


‏تمہیں کیسے کروں شمار عام لوگوں میں 

عام لوگ۔۔۔۔۔۔ نہیں دیتے اچھا خاصہ دُکھ


Tumhen kaise karu shumat aam logo me

Aam log___nahi dety acha khasa dukh 


تمہارے پہلو میں جو ہماری جگہ  کھڑا ہے

 اسے بتاؤ  وہ  شخص کس  کی جگہ کھڑا ہے


Tumhare pehlu me jo humari jaga khara hai

Usy batao wo shakhs kis ki jaga khara hai


تم بھی جھیلو گے کبھی عشق میں فرقت کا یہ دکھ

تم بھی دیکھو گے کبھی چھوڑ کے جاتا ہوا شخص


Tum bhi jheelo gay kabhi ishq me furqat ke ye dukh

Tu bhi dekho gay kabhi chor ke jata hoa shakhs 


آواز دے کہ دیکھ لو شاید وہ مل ہی جائے

ورنہ یہ عمر بھر کا سفر رائیگاں تو ہے


Awaz dy ke dekh Lo shayad wo Mil hi jay

Warna ye umar bhar ka safar raigan to hai


دل پریشاں تھا مگر تمہاری خاطر 

چہرہ شاداب رکھا، بال بنائے رکھے


Dil pareshan tha magr tumhari khatir

Chera shadab rakha, baal bnay rakhy 


وہ جو خود نہ کرسکا وعدے پورے 

وہ مجھے بے وفا کہہ کر چلا گیا


Wo jo khud na kar saka wady poory

Wo mujhe bewafa keh kar chala gya


تمہیں پتا ہے؟ مرے ہاتھ کی لکیروں میں

تمہارے نام کے سارے حروف بنتے ہیں


Tumhen pata hai? Mere hath ki lakeeron me

Tumhare naam ke saray haroom banty hain 


اول رکھا ہے ہر لحاظ تمھیں 

تم تو ہم میں بھی ہم سے پہلے ہو


Awal rakha hai har lihaaz tumhen

Tum to hum me bhi humse pehle ho


لوگوں نے روز مانگا خدا سے کچھ نیا

ایک ہم تھے کہ تیرے خیال سے آگے نہ جا سکے


Logo ne roz manga khuda se kuch naya

Ik hum thy ke tere khiyal se agy na ja saky


0 comments:

Post a Comment